میرپور بھٹو: پاکستان تحریک انصاف کے رہنما سردار ممتاز علی خان بھٹو سے ان کی رہائشگاہ میرپور بھٹو میں مختلف وفود نے ملاقاتیں کیں۔ ان کے سوالوں کے جواب دیتے ہوئے ممتاز علی بھٹو نے کہا کہ بھٹو خاندان کی صدیوں سے دیگر قبیلوں کے افراد سے رشتہ داریاں کی ہوئی ہیں مگر ان میں سے کسی نے بھی اپنے آباؤ اجداد کی ذات چھوڑ کر بھٹوؤں کے نام میں چھپنے کا راستہ اختیار نہیں کیا ہے صرف یہ بالو کے قبو والے زرداری ہی ہیں جنہوں نے اپنے شخصی مفادات کی خاطر اپنے آباؤ اجداد کو بھلا کر بھٹو بن گئے ہیں۔ آج کل ہر جگہ پر زرداری خود کو نہ صرف بھٹو کہلوا رہے ہیں مگر بھٹوؤں کے گوٹھوں، بنگلوں اورقبرستان کو بھی اپنا سمجھ بیٹھے ہیں اور زرداری نام بھلا بیٹھے ہیں باوجود اس کے کہ یہ قدیمی تصور ہے کہ جس کو اپنی ذات کا احساس نہیں ہے وہ زندگی میں کون سے کارنامے انجام دیں گے، بہرحال لوگ انہیں اچھی طرح پہنچان چکے ہیں ان کے پیچھے صرف چند افراد بچہ کچہ حاصل کرنے کے لئے ہاتھ پھلائے دوڑ رہے ہیں بہرحال یہ اب مزید آگے چل کر بھٹوؤں کے سائے میں چھپ نہیں سکیں گے۔ ان کی وجہ سے پیپلز پارٹی صرف سندھ تک محدود ہوگئی ہے جہاں شخصی مفادپرست بھوکے درباری ہاتھ اٹھائے ان کے پیچھے بھاگ رہے ہیں باقی پورے ملک میں چور چور اور بلا بلا ہو چکا ہے مگر یہ الیکشن بھٹوؤں کے نام میں چھپے ہوئے زرداریوں کی آخری الیکشن ہے جس کے بعد ان سے حساب کتاب کا عمل شروع ہو جائے گا۔